Monday, January 30, 2023

صحابہ کرام اور اولیا اللہ

قدم بوسی کی دولت میسرآئی۔صحابۂ کرام اوراولیاء اللہ کے مراتب کا ذکر آیا۔ آپ نےفرمایا: مرتبہ ٔولایت میں سب سے بلندمرتبہ صحابیت کا ہے ۔کوئی بھی غوث وقطب یا ولی کسی ادنیٰ درجے کے صحابی کے برابرنہیں ہوسکتا،کیوں کہ صحابہ کرام نے ایمان کی حالت میں اپنی ظاہری آنکھوں سے مرشداعظم محمدرسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی زیارت کی اوراُن کی صحبت کی برکت سے اپنے ظاہروباطن کو سنوارا۔اُن کے مربی ومرشدخودنبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم تھے اور جن کی تربیت کرنے والے خود نبی ہوں اُن کے مقام و مرتبہ کا کیاپوچھنا:

بس ایک لمحہ میں کرتاہے وہ سلوک تمام

کہ جس کا مرشد و ہادی رسول اکرم ہو

اس کے باوجود کوئی ولی معصوم قطعی نہیں،چاہے صحابہ کرام ہی کیوں نہ ہوں۔واجب العصمۃ تو صرف انبیاکی ذات ہے۔البتہ اولیامحفوظ ہوتے ہیں۔اللہ تعالیٰ کاارشادہے: اِنَّ عِبَادِیْ لَیْسَ لَكَ عَلَیْهِمْ سُلْطٰنٌ ۴۲ (حجر)بے شک میرے بندوںپر تیرابس نہیں چل سکتا۔ ان حضرات کے ارشادات کی تقلید کی جائے گی۔لیکن جوقول یا فعل ان سےغلبۂ حال یا بشریت کے تقاضے کے سبب سرزدہوگا،اس کی نہ تقلیدکریں گے اور نہ تردید،بلکہ تسلیم کریں گے۔

(خضرراہ ،نومبر ۲۰۱۳ء)

Share

Latest Updates

Frequently Asked Questions

Related Articles

اہل عقیدہ کے پانچ طبقات

حضور داعی اسلام دام ظلہ العالی کی خدمت میں علما کی ایک جماعت کے...

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی بعثت کا مقصد

عارف باللہ مرشدی حضور داعی اسلام ادام اللہ ظلہ علینا نے ایک مجلس میں...

اللہ جیسے چاہے اپنا دیدار کرائے

۲۷؍اگست ۲۰۱۶ء بعد نمازِ مغرب حضرت داعی اسلام دام ظلہ کی ہفتہ واری عرفانی...

عوام اور خواص کے عمل میں فرق

سلطان العارفین حضرت مخدوم شاہ عارف صفی قدس سرہٗ کے۱۱۷؍ویں عرس کے موقع پر...