عظمت و رفعتِ آنحضرت ﷺ

0
42

 حکم ربی ہے کہ مَنْ یُّطِعِ اْلرَّسُوْل 
غور سے اس کو سمجھ اے بو الفضول(۱)
 طاعتِ حق ہے اِطاعت آپ کی 
نورِ قُدسی(۲) ہے حقیقت آپ کی 
سرّ توحید ہے رسالت آپ کی 
رمز احدیت ہے وحدت آپ کی 
حضرتِ جبریل جیسے باوقار 
آپ کی رِفعت کے آگے شرمسار 
آپ کی رِفعت ہے ماَ زَاْغَ الْبَصَر(۳)
 قَابَ قَوْسَیْنِ اَوْ اَدْنٰی(۴) سربسر
 آپ کی عظمت عیاں بے قال و قیل 
آپ کی رفعت مسلّم بے دلیل
 آپ ہیں بے شبہ صادق اور امین 
آپ کا اعجاز قرآنِ مبین 
آپ ہیں داناے کل مولاے کل 
 آپ ہادیِ سُبل ختم الرسل 
خلق میں بے مثل و لاثانی ہیں آپ 
مظہرِ حق ظلِّ سبحانی ہیں آپ
 آپ کی عظمت کے آگے سر بسر 
قوتِ جبریل بھی بے بال و پر 
قوتِ بازوے جبریلِ امیں 
ہو گئی شل جا کے سدرہ کے قریں 
رک گئے سدرہ پہ جب وہ نا گہاں 
مصطفی نے ان سے فرمایا کہ ہاں! 
کیوں رکے ہو آگے آؤ اے اخی 
ساتھ مت چھوڑو ہمارا تم ابھی 
کہہ دیا جبریل نے بے ساختا 
گم ہوئی جاتی ہے عقلِ نارسا 
یا رسول اب یہ اخی مجبور ہے
 اس کے آگے بس حجابِ نور ہے 
یک سرِ مو گر بڑھا یا مصطفی 
سوخت کر دے گی تجلّی با خدا 
آپ کو لازم ہے تنہا جائیے 
لذّتِ قربِ الٰہی پائیے 
ماسوا ئے رَحْمَۃٌ لِّلْعٰلَمِیْں 
غیر کا آگے گزر ممکن نہیں 
 نور کو نورِ مجرّد کے سوا 
کون دیکھے گا حقیقت میں بھلا
 کون دیکھے گا بھلا جز مصطفی 
بالمشافہ جلوۂ ذاتِ خدا 
چشمِ سر سے اور دیدارِ خدا 
بے محابا آپ کا ہے معجزا 
آپ کی بصر و بصیرت نور ہے 
اور وہ نورِ حقیقت نور ہے
 نور سے نورِ حقیقت کی ہے دید
 اس کے آگے ختم ہے گفت و شنید
 کون کر سکتا ہے سرِّ حق بیاں
 ماوراے فہم ہے یہ داستاں 
گفتگو اِس میں عبث ہے سر بسر
 بس کہ خاموش اے سعیدؔ بے خبر

(۱) بکواسی،بیٹھا باتیں بنانے والا۔

(۲) قَدْ جَاء کُم مِّنَ اللّہِ نُورٌ (المائدہ:۱۵) مصنف ابن عبد الرزاق کی روایت کردہ حدیث جابر سے بھی اس کی توثیق ہوتی ہے۔ رسول اللہ ﷺنے فرمایا:انامن نوراللہ اس حدیث کی علمانے بالعموم تضعیف کی ہے مگرمذکورہ آیت قرآنی سے اس مفہوم کی تائیدہوجاتی ہے۔ 

(۳) مَا زَاغَ الْبَصَرُ وَمَا طَغَی لَقَدْ رَأَی مِنْ آیَاتِ رَبِّہِ الْکُبْرَی(النجم:۱۷،۱۸)نہ آنکھ جھپکی اور نہ حد سے آگے بڑھی۔ بے شک اس نے اپنے رب کی عظیم نشانیاں دیکھیں۔

(۴) فَکَانَ قَابَ قَوْسَیْْنِ أَوْ أَدْنَی(النجم:۹)اب فاصلہ دو کمان کا یا اس سے بھی کم رہ گیا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here